عاصمہ اور نیہا دو لڑکیوں نے ہم جنس پرستی کی شادی کر لی

قرب قیامت کی نشانی، ٹیکسلا میں‌ 2 لڑکیوں‌ نے ہم جنس پرستی کی شادی کر لی، والدین کو علم ہوا تو پھر…

راولپنڈی (بول پاکستان رپورٹ) ہم جنس پرستی کی شادیاں مغربی ممالک میں تو معمول قرار پا چکی ہیں لیکن اب پاکستان میں بھی اس لت کی ایک سامنے آ گئی ہے جہاں ایک لڑکی نے اپنی شناخت تبدیل کرکے دھوکے سے اپنی ہی ایک سہیلی کے ساتھ شادی رچا لی۔ یہ واقعہ ٹیکسلا میں پیش آیا ہے جہاں عاصمہ بی بی نامی لڑکی نے خود کو مرد ظاہر کرکے اپنی دوست نیہا کے والدین کو دھوکا دیا اور سہیلی کے ساتھ شادی کر لی.

یہ بھی پڑھیں:‌ شادی اور پلاٹ دلانے کا جھانسہ، بس ہوسٹس کے ساتھ جنسی زیادتی، جمع پونجی سے بھی محروم

عاصمہ بی بی نے نیہا کے والدین کو دھوکہ دینے کے لیے اپنے نادرا شناختی کارڈ میں بھی تبدیلی کروا ڈالی اور وہاں اپنا نام بدل کر آکاش کروا لیا۔ بعد ازاں اس نے نیہا سے عدالت کے ذریعے شادی کر لی۔ جب اس شادی کے بارے میں نیہا ک والد کو علم ہوا تو اس نے عاصمہ بی بی عرف آکاش کے خلاف لاہور ہائی کورٹ راولپنڈی بنچ میں درخواست دائر کر دی۔

یہ بھی پڑھیں:‌ پاکستان نے بھارت اور افغانستان کے درمیان تجارت کے لیے واہگہ بارڈر کھولنے کا اعلان کر دیا

عدالت نے عاصمہ اور نیہا دونوں کو کل 15 جولائی کو طلب کر لیا ہے۔ نیہا کے والد کے وکیل امجد جنجوعہ کا کہنا تھا کہ دونوں لڑکیوں کا نکاح کنٹونمنٹ بورڈ وارڈ 10 میں رجسٹرڈ ہوا ہے۔ دوسری طرف عاصمہ بی بی عرف آکاش کا کہنا ہے کہ اس نے نیہا سے شادی سے قبل اپنی جنس تبدیل کروائی ہے اور اب وہ لڑکی نہیں، لڑکا ہے لیکن امجد جنجوعہ کا کہنا تھا کہ “عاصمہ جھوٹ بول رہی ہے۔ پاکستان میں جنس تبدیل کروانا ناممکن ہے اور غیر شرعی بھی ہے۔”

میرا جیٹھ میرے کمرے میں‌گھس آیا اور کنڈی لگا کر۔۔۔ شادی کا جھانسہ دے کر معصوم لڑکیوں‌ کی زندگیاں تباہ کرنے والے گروہ کے ہتھے چڑھنے والی لڑکی کی المناک کہانی

عاصمہ اور نیہا دو لڑکیوں نے ہم جنس پرستی کی شادی کر لی
عاصمہ اور نیہا دو لڑکیوں نے ہم جنس پرستی کی شادی کر لی

یہ بھی پڑھیں:‌ سالی کی محبت میں‌گرفتار شخص نے بینک سے قرض لے کر بیوی کو قتل کروا ڈالا

اپنا تبصرہ بھیجیں