چینی شہری کو بیچی جانے والی پاکستانی دلہن کی عبرتناک کہانی

چینی شہری کو بیچی جانے والی پاکستانی دلہن کی دردناک کہانی، کس اذیت ناک موت سے دوچار ہوئی، سن کر رونگٹے کھڑے ہو جائیں

اسلام آباد(بول پاکستان رپورٹ) شادی کے بہانے پاکستانی لڑکیوں کو چین سمگل کیے جانے کی خبریں کچھ عرصہ سے میڈیا میں آ رہی ہیں ۔ چینی اور پاکستانی حکام سمیت دیگر کئی حلقوں نے انہیں محض افواہیں قرار دیا مگر اب ایسی ہی ایک پاکستانی لڑکی کی دردناک کہانی سامنے آ گئی ہے جس کے بعد آپ ان خبروں کو درست ماننے پر مجبور ہو جائیں گے ۔ ایسوسی ایٹڈ پریس کی رپورٹ کے مطابق اس لڑکی کا نام سمیعہ ڈیوڈ ہے جس سے ایک چینی شہری نے شادی کی اور اسے اپنے ساتھ چین لے گیا۔

یہ بھی پڑھیں: بیرون ملک مقیم پاکستانیوں نے نومبر میں کتنی رقم پاکستان بھیجی؟ جان کر وزیراعظم عمران خان خوش ہو جائیں‌گے

سمعیہ صرف 2ماہ چین میں رہی اور پھر ایسی حالت میں‌ پاکستان واپس آ گئی کہ دیکھ کر والدین کا کلیجہ پھٹ گیا۔ جب وہ واپس آئی تو موت کے دھانے پر کھڑی تھی ۔ جب وہ چین گئی تھی تو صحت مند اور خوبصورت لڑکی تھی لیکن دو ماہ بعد جب واپس آئی تو اسے پہچاننا ہی ناممکن ہو چکا تھا ۔ وہ غذائی کمی کی وجہ سے اتنی لاغر ہو چکی تھی کہ چل بھی نہیں سکتی تھی اور بولنے میں بھی شدید دقت محسوس کرتی تھی اور بمشکل ایک آدھ جملہ ہی بول پاتی تھی.

یہ بھی پڑھیں: آدمی کام سے لوٹا تو اپنی نوجوان بیوی کو ایسی شرمناک حالت میں‌دیکھ لیا کہ مشتعل ہو کر گولیاں برسا دیں

سمعیہ ڈیوڈ کا تعلق پنجاب کے گاءوں مازیکے وال سے تھا ۔ سمعیہ کے کزن پرویز مسیح کا کہنا تھا کہ ’’واپسی پر جب اس کے گھر والے اس سے کوئی بھی سوال پوچھتے تو اس کی آنکھوں سے زاروقطار آنسو بہہ نکلتے اور وہ ٹوٹتی اور اکھڑتی ہوئی آواز میں ایک ہی جواب دیتی کہ ’’مجھ سے مت پوچھو کہ میرے ساتھ وہاں کیا ہوا ۔ ‘‘ اس کے اس جواب سے ہم یہی اندازہ لگاتے ہیں‌ اس سے وہاں جسم فروشی کروائی جاتی رہی تھی اور وہ شرم کے مارے اپنے ساتھ ہونے والا غیر انسانی سلوک بتا نہ پائی اور پاکستان واپسی کے چند ہفتے بعد ہی اس کی موت واقع ہو گئی۔”

یہ بھی پڑھیں: وزیراعظم کے اثاثہ ریکوری یونٹ پر اب تک کتنا خرچ ہو چکا اور کتنی لوٹی ہوئی رقم واپس لایا؟ تفصیلات سامنے آ گئیں

پرویز مسیح نے کہا کہ “ہم حتمی طور پر کچھ نہیں‌جاتے کہ سمعیہ کے ساتھ ان دو ماہ میں وہاں ایسا کیا ہوا کہ وہ اتنی کمزور اور لاغر ہو گئی کہ واپس آنے کے چند ہفتے بعد ہی موت کے منہ میں چلی گئی ۔ سمیعہ کے والدین غریب تھے اور انہوں نے رقم کے لالچ میں آ کر اپنی بیٹی چینی شہری کے ساتھ بیاہ دے دی۔ میں‌ نے سمعیہ کی جو حالت دیکھی ہے، میں‌ تمام والدین سے کہوں‌گا کہ چند ہزار روپوں‌ کے عوض اپنی بیٹیوں کو مت فروخت کریں. انہیں‌ جیتے جی جہنم میں‌ مت دکھیلیں.‘‘

یہ بھی پڑھیں: نیازی چرس پی کر سو رہا ہے، ہسپتال نہیں چلنے دیں گے، انشاء اللہ فتح ہماری ہو گی: ڈاکٹر عرفان کی نئی ویڈیو لیک ہو گئی

رپورٹ کے مطابق سمعیہ کی موت 37سال کی عمر میں ہوئی ۔ اس کی موت سے ظاہر ہوتا ہے کہ پاکستان سے دلہنیں بنا کر چین لیجائی جانے والی خواتین کو کن مظالم کا سامنا کرنا پڑتا ہے ۔ چین سے واپس آنے والی کئی دیگر پاکستانی لڑکیوں نے بھی بتایا ہے کہ انہیں وہاں شدید جسمانی، جنسی اور ذہنی استحصال کا نشانہ بنایا جاتا رہا ۔ ایسوسی ایٹڈ پریس نے ایسی 7لڑکیوں کے انٹرویوز کیے اور ان تمام کا کہنا تھا کہ ان سے وہاں جسم فروشی کروائی جاتی رہی ۔ شادی کے نام پر لڑکیوں کی سمگلنگ کے خلاف کام کرنے والے کارکنوں کا کہنا ہے کہ ’’چین میں ایک پاکستانی دلہن کو قتل کیے جانے کی اطلاع بھی مل چکی ہے ۔‘‘

یہ بھی پڑھیں: وزیراعظم مہاتیر محمد نے کپتان کو تحفے میں‌ کون سی گاڑی بھیجی ہے؟ تفصیلات سامنے آ گئیں

اپنا تبصرہ بھیجیں