سانحہ اے پی ایس پشاور کو 5 سال گزر گئے، اب تک کتنے دہشت گردوں کو پھانسی دی گئی؟

سانحہ اے پی ایس پشاور کو 5 سال گزر گئے، اب تک کتنے دہشت گردوں کو پھانسی دی گئی؟

اسلام آباد (بول پاکستان رپورٹ) آج سانحہ سانحہ آرمی پبلک سکول کو پانچ سال گزر گئے۔ پانچ سال قبل سفاک دہشت گردوں نے آرمی پبلک سکول میں معصوم بچوں کے خون سے ہولی کھیل کر سفاکیت کی وہ انتہاء کی کہ جس کی مثال شاید تاریخ انسانی میں نہ لے۔ سانحے میں ملوث 5 دہشت گردوں کو فوجی عدالتیں پھانسی کی سزا دے چکی ہیں۔

یہ بھی پڑھیں: چینی شہری کو بیچی جانے والی پاکستانی دلہن کی دردناک کہانی، کس اذیت ناک موت سے دوچار ہوئی، سن کر رونگٹے کھڑے ہو جائیں

میڈیا رپورٹس کے مطابق سانحہ اے پی ایس میں‌ ملوث سزائے موت پانے والے ان پانچوں دہشت گردوں کو تختہ دار پر لٹکایا جا چکا ہے۔ موت کے گھاٹ اتارے جانے والے ان دہشت گردوں کے نام عبدالسلام، حضرت علی، مجیب الرحمان، سبیل عرف یحییٰ اور تاج محمد تھے۔ ان میں سے چار دہشت گردوں کو کوہاٹ جیل میں 2 دسمبر 2015ء کو پھانسی دی گئی۔

یہ بھی پڑھیں: وزیراعظم کے اثاثہ ریکوری یونٹ پر اب تک کتنا خرچ ہو چکا اور کتنی لوٹی ہوئی رقم واپس لایا؟ تفصیلات سامنے آ گئیں

یہ بھی پڑھیں: نیازی چرس پی کر سو رہا ہے، ہسپتال نہیں چلنے دیں گے، انشاء اللہ فتح ہماری ہو گی: ڈاکٹر عرفان کی نئی ویڈیو لیک ہو گئی

نجی ٹی وی چینل ہم نیوز کے مطابق اے پی ایس حملے کے اہم سہولت کار تاج محمد کو بھی پھانسی دی گئی۔ دہشت گرد تاج محمد کو بھی فوجی عدالت نے سزائے موت سنائی تھی۔ تاج محمد نے مجسٹریٹ اور ٹرائل کورٹ کے سامنے جرائم کا اعتراف کیا تھا۔ تاج محمد آرمی پبلک سکول پشاور پرحملے میں استعمال ہوا۔وہ کالعدم تحریک طالبان پاکستان کا سرگرم رکن تھا اور مسلح افواج پر کئی حملوں اور خودکش بمباروں کو پناہ دینے میں ملوث تھا۔

یہ بھی پڑھیں: آدمی کام سے لوٹا تو اپنی نوجوان بیوی کو ایسی شرمناک حالت میں‌دیکھ لیا کہ مشتعل ہو کر گولیاں برسا دیں

اپنا تبصرہ بھیجیں