دنیا کا مہنگا ترین لیپ ٹاپ

دنیا کا مہنگا ترین لیپ ٹاپ، قیمت 16 کروڑ روپے، لیکن یہ اتنا خطرناک ہے کہ آپ مفت بھی نہ لیں گے

ہانگ کانگ (بول پاکستان رپورٹ) ہانگ کانگ میں گزشتہ دنوں ایک استعمال شدہ لیپ ٹاپ نیلامی میں 16 کروڑ روپے میں فروخت ہوا ہے لیکن یہ دنیا کا مہنگا ترین لیپ ٹاپ اتنا خطرناک ہے کہ آپ اسے مفت میں بھی نہ لیں گے۔ چینی نیوز ویب سائ’ گائم تائی’ کے مطابق یہ لیپ ٹاپ سام سنگ کمپنی کا ہے جو این سی 10۔ 14 جی بی میموری کا حامل 2008ء ماڈل لیپ ٹاپ ہے۔

یہ بھی پڑھیں:‌ دبئی میں‌ پاکستانی نوجوان نے بھارتی لڑکی کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا اور پھر ایک پاکستانی ہی لڑکی کی مدد کے لیے آ گیا

رپورٹ کے مطابق اس لیپ ٹاپ کی سکرین 10 اعشاریہ 2 انچ کی ہے اور یہ اس لیے دنیا کا خطرناک ترین لیپ ٹاپ ہے کہ اس میں اب تک بنائے جانے والے دنیا کے 6 خطرناک ترین وائرس موجود ہیں۔ یہ وائرس اس قدر خوفناک ہیں کہ اب تک مجموعی طور پر یہ دنیا بھر میں لوگوں کا 95 ارب ڈالر (تقریباً ڈیڑھ سو کھرب روپے) کا نقصان کر چکے ہیں۔ اب آپ ہی بتائیے کہ ایسے خوفناک لیپ ٹاپ کو کون خریدے گا، جب وہ ہے بھی اتنا پرانا ماڈل اور اس پر اتنا خطرناک کہ آپ اس میں اپنی کوئی بھی چیز رکھیں گے تو اس سے ہاتھ دھو بیٹھیں گے۔ ویب سائٹ کے مطابق یہ لیپ ٹاپ انٹرنیٹ آرٹست گیواؤ ڈونگ نامی چینی شہری کا ہے جس نے خود اس میں یہ خطرناک وائرس انسٹال کیے ہیں اور جان بوجھ کر اسے دنیا کا خطرناک ترین لیپ ٹاپ بنایا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:‌ مسجد میں‌نماز کے لیے مرد و خواتین کو اکٹھے کھڑا ہونا چاہیے یا الگ؟ مسجد الحرام کے سابق امام نے ایسا فتویٰ دے دیا کہ شدید بحث چھڑ گئی

ماہرین کا کہنا ہے کہ “جب تک آپ اس لیپ ٹاپ کو وائی فائی سے منسلک نہیں کرتے، تب تک یہ آپ کے لیے محفوظ ہو گا لیکن جونہی آپ اسے انٹرنیٹ سے منسلک کریں گے اس میں موجود آپ کا ڈیٹا اور ذاتی معلومات داؤ پر لگ جائیں گی اور آپ ان سے نہ صرف ہاتھ دھو بیٹھیں گے بلکہ وہ ہیکرز کے ہتھے بھی چڑھ جائیں گی اور یہ دنیا کا مہنگا ترین لیپ ٹاپ آپ کو بھی مہنگا پڑ جائے گا۔ اس کے علاوہ اس لیپ ٹاپ کے ساتھ یو ایس بی منسلک کرنا بھی بہت خطرناک ہو گا کیونکہ یہ وائرس فوری طور پر یو ایس بی میں منتقل ہو جائیں گے اور پھر وہ یو ایس بی قابل استعمال نہیں رہے گی۔ یہ وائرس ایسے خطرناک ہیں کہ ان کے آگے اب تک وجود میں آنے والے تمام اینٹی وائرس بے بس ہو جاتے ہیں۔” واضح رہے کہ یہ لیپ ٹاپ ڈونگ جیسے ہی ایک انٹرنیٹ آرٹسٹ نے خریدا ہے۔ شاید اسی لیے کہتے ہیں کہ شوق کا کوئی مول نہیں ہوتا، ورنہ یہ لیپ ٹاپ ہم جیسا کوئی عام آدمی تو مفت میں نہ لے۔

یہ بھی پڑھیں:‌ شاہ محمود قریشی کے ساتھ صلح‌ ہو گی یا نہیں؟ جہانگیر ترین نے پہلی بار کھل کر جواب دے دیا

اپنا تبصرہ بھیجیں